نجیب_کہاں_ہے..؟

(محمد اشرف یاسین( نئی دہلی

نجیب کو غائب ہوئے آج تین سال ہوگئے، 2016 میں نجیب نے جے این یو میں داخلہ لیاتھا اور داخلہ کے 15 دن بعد ہی اُس کے غائب کئے جانے کا سانحہ بھی پیش آگیا، اِس پورے معاملہ میں جے این یو ایڈمنسٹریشن، موجودہ حکومت، دہلی پولیس، دہلی حکومت SIT اور CBI سبھی کے سبھی قصوار ہیں،

یاد دہانی کرانے کی یہ بالکل بھی ضرورت نہیں ہے کہ اسی موجودہ حکومت( NDA) نے 2013 میں UPA حکومت کو طعنہ دیتے ہوئے CBI کو پنجرے کا طوطا کہا تھا اور آج کے تناظر میں کون پنجرے کا طوطہ ہے یہ بات بتانے کی قطعی ضرورت نہیں ہے، یہ وہی CBI ہے جس نے پچھلے سال نجیب معاملہ کی فائل بند کردی تھی اور پچھلے تین ماہ سے اِس کے ذمہ داران ایک دوسرے پر الزام تراشی کررہے ہیں،

یہ بے وقت کی راگنی ہرگز نہیں ہے بلکہ آج جے این یو میں اِسی موضوع پر مشتمل AMMI نامی ڈاکیومینٹری دیکھنے کے بعد قلم برداشتہ یہ چند باتیں زیر انگلی آگئیں لکھنے کواور بھی بہت کچھ ہے اور اِس موضوع پر اخباروں میں بہت کچھ لکھا اور آن و آف ریکارڈنگ بہت کچھ بولابھی گیاہےـ لیکن میں بس اتنے پر ہی اکتفا کرتاہوں ـ

ہمیں خبر ہے مجرموں کے سب ٹھکانوں کی
شریک جُرم نہ ہوتے تو مخبری کرتےـ

محمد اشرف یاسین
جواہر لال نہرو یونیورسٹی

0 Comments

Leave a reply

Your e-mail address will not be published. Required fields are marked *

*

CONTACT US

We're not around right now. But you can send us an email and we'll get back to you, asap.

Sending

Designed by  New India Times News Network

Nit tv

New India Times न्यूज 24X7 आपको प्रत्येक खबर से 24 घण्टे अपडेट  2014 -15

Log in with your credentials

Forgot your details?

Skip to toolbar